رات کچھ یارِ طرحدار بہت یاد آئے

رات کچھ یارِ طرحدار بہت یاد آئے وہ گلی کوچے، وہ بازار بہت یاد آئے جن کے ہونے کی تسلی سے خوشی ہوتی تھی درد…

ادامه مطلب

عجب نشہ ہے ترے قرب میں کہ جی چاہے

عجب نشہ ہے ترے قرب میں کہ جی چاہے یہ زندگی تری آغوش میں گزر جائے میں تیرے جسم میں کچھ اس طرح سما جاؤں…

ادامه مطلب

ڈھونڈتے کیا ہو ان آنکھوں میں کہانی میری

ڈھونڈتے کیا ہو ان آنکھوں میں کہانی میری خود میں گُم رہنا تو عادت ہے پرانی میری بھیڑ میں بھی تمہیں مل جائوں گا آسانی…

ادامه مطلب

عجب حالات تھے میرے عجب دن رات تھے میرے

عجب حالات تھے میرے عجب دن رات تھے میرے مگر میں مطمئن تھا اس لیے تم ساتھ تھے میرے مرے زر کے طلبگاروں کی نظریں…

ادامه مطلب

اب آنے والی ہے فصلِ بہار، سوچتے تھے

اب آنے والی ہے فصلِ بہار، سوچتے تھے ہم اس طرح تو بہت اعتبار سوچتے تھے جگائے رکھتی تھی راتوں کو کیسی بے چینی کسی…

ادامه مطلب

کل یہ لکھتی تھیں بچھڑنا تمہیں منظور نہیں

کل یہ لکھتی تھیں بچھڑنا تمہیں منظور نہیں اب یہ کہتی ہے ”میرے خط مجھےواپس کردو” ذکر، پیروں میں چھنکتی ہوئی زنجیر کا ہے عذر،…

ادامه مطلب

آنے والی تھی خزاں، میدان خالی کر دیا

آنے والی تھی خزاں، میدان خالی کر دیا کل ہوائے شب نے سارا لان خالی کر دیا ہم ترے خوابوں کی جنت سے نکل کر…

ادامه مطلب

لب پہ نہ لائے دل کی کوئی بات اُسے سمجھا دینا

لب پہ نہ لائے دل کی کوئی بات اُسے سمجھا دینا میں تو مرد ہوں اور وہ عورت ذات اُسے سمجھا دینا سکھیاں باتوں باتوں…

ادامه مطلب

بالآخر یہ حسیں منظر مٹا دینا ہی پڑتا ہے

بالآخر یہ حسیں منظر مٹا دینا ہی پڑتا ہے کسی کے سر کو شانے سے ہٹا دینا ہی پڑتا ہے کسی دیر آشنا کو جھوٹے…

ادامه مطلب

لو، خدا حافظ تمہیں کہنے کی ساعت آ گئی

لو، خدا حافظ تمہیں کہنے کی ساعت آ گئی دل کو تھا جس بات کا دھڑکا وہ نوبت آ گئی ٹوٹ کر برسی گھٹا تجھ…

ادامه مطلب

اک بار مجھے آواز تو دے

اک بار مجھے آواز تو دے ترے لمس کی خوشبو پہنوں گا ترے درد کو ہار بنائوں گا اک بار مجھے آواز تو دے میں…

ادامه مطلب

نہ خط لکھوں نہ زبانی کلام تجھ سے رہے

نہ خط لکھوں نہ زبانی کلام تجھ سے رہے خاموشیوں کا یہی انتقام تجھ سے رہے رہے بس اتنا شناسائی کا بھرم باقی اشارتاً ہی…

ادامه مطلب

بس میں اس سے اتنا کہتا

بس میں اس سے اتنا کہتا دیکھو میری چاند سی گڑیا! ہر دم ہر پل تم خوش رہنا تنہائی کے دُکھ مت سہنا اور اگر…

ادامه مطلب

معلوم نہ تھا ہم کو ستائے گا بہت وہ

معلوم نہ تھا ہم کو ستائے گا بہت وہ بچھڑے گا تو پھر یاد بھی آئے گا بہت وہ اب جس کی رفاقت میں بہت…

ادامه مطلب

بند دریچے سونی گلیاں ان دیکھے انجانے لوگ

بند دریچے سونی گلیاں ان دیکھے انجانے لوگ کس نگری میں آ نکلے ہیں ساجد ہم دیوانے لوگ ایک ہم ہی ناواقف ٹھرے روپ نگر…

ادامه مطلب

تمہارے بعد اس دل کا کھنڈر اچھا نہیں لگتا

تمہارے بعد اس دل کا کھنڈر اچھا نہیں لگتا جہاں رونق نہیں ہوتی وہ گھر اچھا نہیں لگتا نیا اک ہمسفر چاہوں تو آسانی سے…

ادامه مطلب

تمام عمر تڑپتے رہیں کسی کے لیے

تمام عمر تڑپتے رہیں کسی کے لیے اور اپنی موت بھی آئے تو بس اُسی کے لیے جوازِ ترکِ تعلق تو کچھ نہ تھا،پھر بھی…

ادامه مطلب

تمہیں جب کبھی ملیں فرصتیں، مرے دل سے بوجھ اتار دو

تمہیں جب کبھی ملیں فرصتیں، مرے دل سے بوجھ اتار دو میں بہت دنوں سے اداس ہوں مجھے کوئی شام ادھار دو مجھے اپنے روپ…

ادامه مطلب

تجھے بھلا کے جیوں ایسی بددعا بھی نہ دے

تجھے بھلا کے جیوں ایسی بددعا بھی نہ دے خدا مجھے یہ تحمل یہ حوصلہ بھی نہ دے مرے بیان صفائی کے درمیاں مت بول…

ادامه مطلب

خدا جانے تمہارے ذہن میں کیا ہے؟

خدا جانے تمہارے ذہن میں کیا ہے؟ مرے بارے میں تم کیا سوچتی ہو کہہ نہیں سکتا مگر میں اسلئے ملنے سے کتراتا ہوں تم…

ادامه مطلب

بہت سجائے تھے آنکھوں میں خواب میں نے بھی

بہت سجائے تھے آنکھوں میں خواب میں نے بھی سہے ہیں اس کے لیے یہ عذاب میں نے بھی جدائیوں کی خلش اس نے بھی…

ادامه مطلب